قصہ حلال پونڈی ماحول کا

موضوع: آس پاس, بینڈ باجا

قصہ حلال پونڈی ماحول کا

ہر وقت مسلمانوں کے زوال کا ذمہ دار داڑھی والے مولوی کو ٹھرانے والے داڑھی منڈے غیر مولوی لبرل حضرات نے آج ہماری مسجد کے پارکنگ لاٹ میں ہر سال کی طرح اس سال بھی ایک میلہ لگایا تھا-

جناب میلہ کیا تھا پونڈی بازی کے لئے “الانت والاخیر” ہی مچی ہوئی تھی، آپ یقین کریں پونڈی کرنے کے لئے شاپنگ مال جانے کی بجائے بندا مسجد چلا جائے اور امی بھی خوش اور پونڈی بھی حلال کہ مسجد میں ہی ہو رہی ہے، آنٹیوں کے وہ تنگ و چست کپڑے اور انکی بیٹیوں کی ننگی ٹانگیں ایسے نکلی جا رہی تھیں کہ بندا اوپر دیکھے تو اسغفراللہ اور نظریں جھکانے لگے تو ان للہ

لڑکے لڑکیوں کے میل ملاپ سے تنگ پڑ کر آرگنائزر انکل نے آخر علان ہی کیا کہ اگر کوئی شادی کروانے میں انٹرسٹڈ ہے تو میرے پاس آجائے آگے میں اسے ڈئریکٹ کر دوں گا، آگے وہ جانیں، میں نے کہا ہاں بئی کرو کرو تاکہ ڈیٹنگ بھی حلال ہو-

لڑکیاں لڑکوں کو تاڑ رہیں تھیں اور لڑکے لڑکیوں کو، ایک کونے میں محلے کے بابے بڈھے بھی کالی عینکیں لگا کر شیڈ میں بیٹھے سبحان اللہ کا ذکر جہر کر رہے تھے – وجہ شاید بے پردگی کی وجہ سے پیدا ہونے والے اثر کو زائل کرنا ہو۔

jiraiya-animestockscom-018

رات کو ہماری دکان پر مسجد کے مولانا صاحب آگئے، میں نے کہا حضرت آپ آج کدھر گئے تھے، کہنے لگے یار میں تو آج ہملٹن گیا تھا بچوں کو امی ابو سے ملانے واپسی پر سوچا پیزا کھلا دوں،

میں نے کہا اچھا کیا آپ مسجد نہیں گئے وہاں آج مسجد کا ماحول تو نہیں تھا ہاں شاپنگ مال کا محول ضرور تھا-

میں نے کہا آپ ان لوگوں کو منع نہیں کرتے؟

کہنے لگے یار کتنی دفعہ سمجھائیں گے ؟

میں نے کہا حضرت سمجھانے کے بھی طریقے ہوتے ہیں جو لوگ پیار سے نہ مانیں انکے لئے دوسرے طریقے استعمال کریں –

میں نے مولانا صاحب کو اس جمعہ میں اسی بات کو موضوع خطاب بنانے کی بھی درخواست کی –

تبصرے بذیعہ فیس بک۔۔۔۔

قصہ حلال پونڈی ماحول کا پر اب تک 5 تبصرے

  • محمد سلیم

    Monday، 27 July 2015 بوقت 3:47 am

    پتہ نہیں کیا کیا حلال ہوگا، آگے آگے دیکھیئے ہوتا ہے ۔
    ایک بات بتاؤں؟ تیری اس پوسٹ نے تیری بینڈ وائڈتھ کیپیسیٹی کو کریش کرنا ہے، دیکھ لیو 😀 میں خود حلال پونڈی کا طریقہ سیکھنے ادھر آیا ہوں۔ ہاہاہاہاہاہا

  • فخرنوید

    Monday، 27 July 2015 بوقت 4:13 am

    اللہ خیر کرے

    تسی کینی کو پونڈی فرمائی فیر؟

  • محمد اسلم فہیم

    Monday، 27 July 2015 بوقت 5:32 am

    مجھے نہیں پتہ تھا کہ یہ “پونڈی” کیا ہوتی ہے سو یہ جاننے کیلئے یہاں چلا آیا ائندہ جب میلہ لگے تو مجھے بھی “خاموش آواز” دے دینا 🙂

  • علی

    Monday، 27 July 2015 بوقت 7:47 am

    ویسے تو یہ ہنسنے کا نہیں رونے کا مقام ہے لیکن پھر بھی ہا ہا ہا

  • Najeeb Alam

    Monday، 27 July 2015 بوقت 11:59 am

    بہت اعلی تحریر

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *